Follow by Email

Thursday, 19 July 2012

عشق کے درد کا چارہ آخر کسکے بس میں ہوت ہے
جو  پہلے  دل میں ہوتا تھا اب نس نس   میں ہوتا ہے

اڑنے  کے ارمان سبھی کے پورے کب ہو پاتے   ہیں
اڑنے   کا ارمان   اگرچہ   ہر بکس  میں   ہوتا ہے

چاند   ستاروں پر رہنے کی خواہش اچھی ہے  لیکن
چاند ستاروں پر رہ پانا کس کے بس میں   ہوتا ہے

ایک   ارادہ کرکے گھر سے چلنے میں ہے دانائی
لوگوں   کا نقصان ہمیش پیش و پس   میں ہوتا ہے

پیار کی   پہلی بارش میں  بھی ہے بلکل ویسا جادو
جیسا جادو بھینی بھینی  مشک خس  میں  ہوتا  ہے

اس سے باتیں کرنے میں سب خوف ہوا ہو جاتے ہیں
کس   درجہ پرزور  دلاسا   اک ڈھارس میں ہوتا ہے

میرے  جیسا    لوہا  آخر    سونے   میں  تبدیل   ہوا
تجھ میں شاید وو سب کچھ ہے جو پراس میں ہوتا ہے

منش شکلا








No comments:

Post a Comment