Follow by Email

Tuesday, 29 October 2013

جرم  کا   انکشاف   کرنا   ہے
اب  ہمیں  اعتراف   کرنا   ہے

ہمکو  ہر  پل  گناہ  کرنے  ہیں
تجھکو  ہر  پل  معاف کرنا  ہے

ایک   گرداب  کی  طرح   ہمکو
جانے  کب تک طواف کرنا  ہے

جنگ لڑنی   ہے اپنی متی سے
خود کو خود کے خلاف کرنا ہے

حق  بیانی  سے   کام   لینا  ہے
سارا  قصّہ  ہی  صاف  کرنا  ہے

مان   جانا  ہے  ہمکو آخر 'میں 
بے  سبب   اختلاف   کرنا   ہے

ان چٹانوں میں  در  کھلے کوئی
اتنا    گہرا    شگاف   کرنا   ہے

منش شکلا


No comments:

Post a Comment