Follow by Email

Sunday, 11 June 2017



ہر کسی کے سامنے تشنہ لبی کھلتی نہیں
اک سمندر کے سوا سب سے ندی کھلتی نہیں

خود نمائی کے لئے اک آئینہ بھی چاہیے
جھیل پر پڑنے سے پہلے چاندنی کھلتی نہیں




No comments:

Post a Comment